IELTS میں ایک بینڈ 8 حاصل کرنے کیلئے تحریری مشق 2آپ کو ایک ایسا مضمون تیار کرنے کی ضرورت ہوگی جس میں بینڈ 8 تحریری تشخیص کے معیار میں شامل تمام مثبت خصوصیات شامل ہوں۔ آئیے نیچے دیئے گئے جدول میں ان پر ایک نظر ڈالیں۔  

مشق کا جواب
  • مشق کے سارے حصوں پر کافی توجہ دیتا ہے
  • متعلقہ، توسیع شدہ اور حمایت شدہ نظریات والے سوال کے جواب میں ایک اچھی طرح سے تیار کردہ جواب پیش کرتا ہے
ہم آہنگی اور پیوستگی
  • معلومات اور خیالات کو منطقی ترتیب میں رکھتا ہے
  • ہم آہنگی کے تمام پہلوؤں کا اچھی طرح نظم کرتا ہے
  • پیراگرافنگ کا استعمال کافی اور مناسب طریقے سے کرتا ہے
لغوی ذریعہ
  • بعینہ معنی بیان کرنے کیلئے روانی اور لچکدار طریقے سے ذخیرۂ الفاظ کی ایک وسیع رینج کا استعمال کرتا ہے
  • مہارت کے ساتھ غیر معمولی لغوی اشیا کا استعمال کرتا ہے لیکن الفاظ کے انتخاب اور ترتیب میں کبھی کبھار غلطیاں ہوسکتی ہیں
  • ہجے اور/یا لفظ کی تشکیل میں شاذ و نادر غلطیاں کرتا ہے
قواعد کا دائرہ کار اور درستگی
  • ڈھانچے کی ایک وسیع رینج کا استعمال کرتا ہے
  • جملے کی اکثریت غلطی سے پاک ہوتی ہے
  • صرف کبھی کبھار غلطیاں یا نامناسب چیزیں کرتا ہے

بینڈ کے وضاحت کار کو بطور رہنما استعمال کرتے ہوئے ہم تحریری مشق 2 میں بینڈ 8 تک جانے کیلئے آپ کو 8 مرحلوں سے روشناس کروانے جا رہے ہیں۔  

آپ کو اس معیار سے واقف کروانے سے قبل کہ آپ کے جواب میں ایک ممتحن کیا تلاش کرے گا، ہم آپ کو مشق کا جواب بتاتے ہوئے شروع کریں گے۔

مرحلہ 1: جواب سوال سے متعلق ہے

سوال میں آپ سے جو پوچھا گیا ہے اسی کا جواب دیں۔ ایسا مضمون نہ تیار کریں جو اس موضوع کے قریب ہو جسے آپ نے پہلے سے تیار کیا ہے۔ اس بات کو یقینی بنائیں کہ آپ کی مثال اور نظریات با موقع ہوں۔ اگر آپ اسے بہت زیادہ عام کردیتے ہیں اور موضوع سے زیادہ مخصوص نہیں رہتے ہیں تو اس سے آپ کے نظریات ممتحن کے سامنے پیش کیے جانے کے طریقے پر اثر پڑے گا۔  

یہ کریں 

  • یقینی بنائیں کہ آپ کے آئیڈیاز سوال سے براہ راست وابستہ رہیں 

  • ان نظریات اور مثالوں کا استعمال کریں جن سے آپ واقف ہوں، اور اس کا تعلق براہ راست موضوع سے ہو 

  • اپنے جواب میں توسیع کرکے متعدد خیالات شامل کریں جو سوال کی حمایت کریں گے۔  

نہ کریں: 

  • غیر متعلقہ معلومات شامل کرنا 

  • حد سے زیادہ عام کرنا 

  • ایک یاد کیا ہوا مضمون پیش کرنا  

  • موضوع سے متعلق ’حالیہ‘ تحقیق یا اعداد و شمار پیش کریں ”تمام مردوں میں سے کم از کم %41…“

مرحلہ 2: سوال کے تمام حصوں کا جواب دیں

آپ کے ليے ضروری ہے کہ سوال کو غور سے پڑھیں اور فیصلہ کریں کہ اس میں کتنے حصے ہیں۔ بینڈ 6 یا اس سے زیادہ کے بینڈ تک پہنچنے کے ليے آپ کو سوال کے سارے حصوں کا جواب دینا چاہیئے۔  

آئیے ہم IELTS کے سوالات کے لقموں کی کچھ مثال ملاحظہ کریں اور دیکھیں کہ اگر آپ کو اپنی رائے پیش کرنے کی ضرورت ہو تو، ہر ایک میں کتنے حصے ہیں۔ یاد رکھیں، بیان کا جواب دیتے وقت، یہ ظاہر کرنے کیلئے کہ آپ سے جو سوال پوچھا جا رہا ہے آپ اسے سمجھتے ہیں، اور مضمون کے دوران اس مؤقف کو واضح رکھنے کے لیے ایک صاف مؤقف پیش کرنا بہت ضروری ہوتا ہے۔

سوال کی قسم کتنے حصے؟ رائے درکار ہے؟
آپ کس حد تک اس بیان سے متفق یا غیر متفق ہیں؟ 1-حصہ والا سوال ہاں، متفق یا غیر متفق ہیں، یا فیصلہ کریں کہ آپ کیوں مساوی طور پر متفق/غیر متفق ہیں۔
دونوں خیالات پر تبادلہ خیال کریں اور اپنی رائے دیں۔ 3-حصہ والا سوال - جیسا کہ بیان کیا گیا ہے دونوں خیالات پر تبادلہ خیال کریں ہاں، اپنی رائے پیش کریں، یہ دونوں خیالات میں سے ایک نظریہ یا دونوں کا مجموعہ ہوسکتا ہے۔
ایسا کیوں ہے؟ اس کی وجوہات اور حل بتائیں؟ 3-حصہ والا سوال اس سے متعلق ایک پوزیشن پیش کی جاتی ہے کہ ایسا کیوں ہے، معاملہ کو حل کرنے کیلئے اس معاملے کی وجوہات اور حل۔
کیا بین الاقوامی سیاحت کے نقصانات فوائد سے زیادہ ہیں؟ 2-حصہ والا سوال ہاں، آپ کو واضح طور پر کہنا چاہیے کہ آیا زیادہ فوائد ہیں یا زیادہ نقصانات۔
ایسا کیوں ہے؟ اس کا فرد اور معاشرے پر کیا اثر پڑتا ہے؟ 3-حصہ والا سوال ہاں، آپ کو بیان کی وجوہات ضرور بتانی چاہئیں اور پھر 1) فرد پر اور 2) معاشرے اس کے پڑنے والا اثر پیش کرنا چاہیے۔

یہ کریں: 

  • سوال کو غور سے پڑھیں اور فیصلہ کریں کہ اس میں کتنے حصے ہیں 

  • اپنی رائے پیش کریں اور پورے مضمون میں اس کی تائید کریں 

  • اگر آپ کو دونوں خیالات پیش کرنے کیلئے کہا گیا ہے، تو یقینی بنائیں کہ ہر نظریہ یکساں طور پر پیش کیا گیا ہو (پیراگراف کی یکساں لمبائی) 

  • جمع پر نظر رکھیں۔ اگر آپ سے ’فوائد‘ بتانے کیلئے کہا جاتا ہے تو آپ کو کم از کم 2 فوائد پیش کرنا چاہیئے  

  • ’اور‘ پر نظر رکھیں۔ آپ کو ایک سے زیادہ عنصر پر تبصرہ کرنے کی ضرورت پڑسکتی ہے  

  • 250 سے زیادہ الفاظ لکھیں۔  

نہ کریں: 

  • سوال کے حصوں کو نظرانداز کر دیں  

  • فرض کریں کہ آپ کی رائے واضح ہے، اس بات کو یقینی بنانے کیلئے فرسٹ پرسن کا استعمال کریں کہ ممتحن جان لے کہ یہ آپ کی ذاتی رائے ہے جیسے 'I think'  

  • ممتحن کو بتائیں کہ آپ کیا کہنا چاہتے ہیں اور آپ نے کیا کہا ہے  

  • ایک مختصر مضمون تیار کریں۔ 

مرحلہ 3: لنکنگ فقروں کا استعمال کرتے ہوئے واضح پیشرفت کے ساتھ اپنے مضمون کو منطقی انداز میں ترتیب دیں

خیالات کا اظہار اور واضح طور پر ترتیب دینا ضروری ہے - کسی تعارف سے شروع کرتے ہوئے اور ایک نتیجے پر پہنچنا۔ 

اگر آپ سے دونوں نظریات اور اپنی رائے پیش کرنے کیلئے کہا گیا ہے تو، مضمون کے آغاز میں اپنی رائے بتائیں اور پھر دونوں خیالات پیش کرنے کے لئے آگے بڑھیں۔ اس کے بعد آپ اپنی رائے پر واپس آسکتے ہیں اور پھر مضمون کا اختتام کرسکتے ہیں۔ ان خیالات کو پیش کرنے کا یہ ایک منطقی طریقہ ہے۔  

یہ کریں: 

  • کئی طرح کے منسلک الفاظ اور فقرے استعمال کریں، لیکن ان کا کثرت سے استعمال نہ کریں 

  • تنہاا بنیادی لنکرز کے بجائے ایڈورب والے فقرے استعمال کریں 

  • تکرار سے بچنے کیلئے حوالوں اور متبادلات کا استعمال کریں (this/them/the issue/the problem)  

  • اپنی تحریر کی ہم آہنگی کیلئے رموز و اوقاف کا استعمال کریں  

  • یقینی بنائیں کہ آپ کے آئیڈیا درست ترتیب میں ہوں  

  • یقینی بنائیں کہ آپ کے نظریات منطقی ہوں اور انھیں سمجھنا آسان ہو  

  • تعارف اور اختتام کے ليے ایک علیحدہ پیراگراف استعمال کریں  

  • ہر آئیڈیا یا موضوع کے شعبے کیلئے ایک پیراگراف کا استعمال کریں۔ 

نہ کریں: 

  • بنیادی لنکنگ الفاظ کا زیادہ استعمال کرنا جیسے firstly (اس کے بجائے، ‘The first reason for/ The primary reason for this’ استعمال کرنے کی کوشش کریں)۔  

  • ہر جملے کو ایک لنکر سے شروع کریں (اسے جملے کے بیچ میں رکھنے کی کوشش کریں۔ مثلاً “Some people believe, however, that individuals must also take responsibility for the environment” یا “I believe, on the other hand, that individuals do have a responsibility to…”)  

  • نمبر، علامت یا مخففات (1، 2، etc، &، +) استعمال کریں  

  • عنوانات یا ذیلی عنوانات استعمال کریں  

  • الفاظ یا فقروں کے نیچے لکیر کھینچیں (Underline) 

  • ایک جملے کے پیراگرافس کا استعمال کریں 

  • ہر جملے کو لنکنگ ڈیوائس سے شروع کریں۔ 

مرحلہ 4: اپنے مضمون کو پیراگرافوں میں ترتیب دیں

اپنے مضمون کو واضح حصوں میں ترتیب دینے کیلئے پیراگرافس کا استعمال کریں۔ یقینی بنائیں کہ ہر پیراگراف میں کم از کم دو جملوں کے ساتھ ایک واضح اور مکمل موضوع شامل ہو۔  

جب آپ اپنا مضمون لکھیں تو آپ مخفف ”PEEL“ کا استعمال کرسکتے ہیں:  

Point - اپنے موضوع یا موضوع سے متعلق جملہ پیش کریں 

Example - ایک مثال جو آپ کے نقطہ نظر کی تائید کرتی ہے 

Explain - کس طرح یہ ثبوت آپ کی بات کی تائید کرتا ہے 

Link - اگلے موضوع یا پیراگراف میں منتقلی 

منظم جواب کو واضح طور پر ظاہر کرنے کیلئے آپ کو حسب ضرورت پیراگراف استعمال کرنے چاہیئیں۔ اس سے ظاہر ہوگا کہ آپ اپنے خیالات اور نظریات کو منطقی انداز میں منظم اور پیش کرسکتے ہیں۔  

یہاں اس بارے میں کچھ خیالات ہیں کہ ایک مضمون میں آپ کتنے پیراگراف شامل کر سکتے ہیں: 

سوال کی قسم کتنے پیراگراف؟ پیراگراف
آپ کس حد تک اس بیان سے متفق یا غیر متفق ہیں؟ 4/5
  1. تعارف
  2. یہی وجہ ہے کہ میں متفق/غیر متفق ہوں
  3. ایک اور وجہ سے میں متفق/غیر متفق ہوں
  4. کنسیشن پیراگراف وہ سبب جس کی وجہ سے میں متفق/غیر متفق نہیں ہوں
  5.  نتیجہ
دونوں خیالات پر تبادلہ خیال کریں اور اپنی رائے دیں۔ 5
  1. تعارف
  2. ایک نظریہ
  3. دوسرا نظریہ
  4. آپ کی رائے
  5. نتیجہ
ایسا کیوں ہے؟ اس کی وجوہات اور حل بتائیں؟ 5
  1. تعارف
  2. سبب جس کی وجہ سے ایسا ہے؟
  3. اس کا سبب
  4. اس کیلئے حل
  5. نتیجہ
کیا بین الاقوامی سیاحت کے نقصانات فوائد سے زیادہ ہیں؟ 4
  1. تعارف (زیادہ فوائد)
  2. فوائد (3)
  3. نقصانات (2)
  4. نتیجہ
ایسا کیوں ہے؟ اس کا فرد اور معاشرے پر کیا اثر پڑتا ہے؟5
  1. تعارف
  2. ایسا کیوں ہے
  3. فرد پر اثر/اثرات
  4. معاشرے پر اثر/اثرات
  5. نتیجہ

یہ کریں: 

  • پیراگراف استعمال کریں 

  • اپنے پیراگراف کے درمیان اور اس کے اندر لنکرز استعمال کریں 

  • ہر پیراگراف کے درمیان ایک جگہ (ایک لائن) چھوڑیں  

  • ہر موضوع کیلئے ایک پیراگراف استعمال کریں  

  • ایک تعارف اور نتیجہ استعمال کریں۔ 

نہ کریں 

  • ایک جملے کا پیراگراف استعمال کرنا 

  • ایک بہت ہی طویل پیراگراف کا استعمال کرنا جس میں پورے صفحے کا احاطہ ہوتا ہو (کاغذ پر مبنی ٹیسٹ)

Step 5: Use less common vocabulary and spell it correctly

You will see in the band descriptors that a band 8 writer skillfully uses uncommon lexical items. When we learn a language, we use common and uncommon terms. Common terms are words and phrases we use every day to refer to personal experience and daily habits. Uncommon terms are used when we discuss specific topics or when we use idiomatic language (phrasal verbs).  

Words that are old-fashioned and not used in everyday speech should not be used. If you choose a synonym, the meaning must be the same and must not alter the idea being presented. For example, adolescent/teenager have close meaning and can be used interchangeably, however, toddler/baby have quite different meanings. 

Collocation is also mentioned in band 8, and it is assumed that you know which words go together, and which words are suitable to use for different topics.  

If you are discussing child crime, you could use the term ‘minor’ as this is a legal term used to describe children under the age of 18.  

If you use phrasal verbs, make sure that you are using the correct preposition as it can change the meaning:  

throw out/away = discard  

throw up = vomit/get sick  

Idioms (cultural language) should only be used if you understand them completely and if they fit the topic you are discussing.  

Do

  • Use precise word choices  

  • Use language that we use in everyday speech  

  • Use words that you understand  

  • Use words and phrases that are related to the topic  

  • Use collocation and phrasal verbs (words that go together naturally – environmental pollution | major issue | promising future) 

Don't 

  • Make spelling mistakes  

  • Make typos  

  • Mix up American and British spelling (You should use one or the other)  

  • Use a word if you don’t understand it or cannot spell it.  

  • Use imprecise words like ‘stuff/thing’  

  • Use slang like ‘gonna’  

  • Use old-fashioned language [the masses| denizens | myopic view | Hitherto]  

  • Overuse synonyms, one is enough 

  • Use idioms/clichés  

  • Use contractions (can’t, doesn’t)

مرحلہ 6: یاد کی ہوئی زبان، فقرے یا مثالوں کا استعمال نہ کریں

اپنے مضمون میں کہیں بھی کوئی یاد کردہ زبان، فقروں یا مثالوں کا استعمال نہ کریں۔ ممتحن آسانی سے اس کا پتہ لگا سکتے ہیں اور اس سے آپ کی روانی سے لکھنے کی صلاحیت کا اظہار بھی نہیں ہوتا ہے۔  

کثرت سے استعمال ہونے والے فقروں، محاوروں، کہاوتوں اور فرسودہ الفاظ سے بھی پرہیز کرنا چاہیئے، دوبارہ یاد رکھیں، ان کو اکثر بولنے میں استعمال کیا جاتا ہے۔ ان میں مندرجہ ذیل جیسے جملے شامل ہیں:  

  • The grass is always greener on the other side  

  • Love is blind  

  • Off the top of my head  

  • Old is gold  

  • A friend in need is a friend indeed  

مزید برآں، لکھتے وقت مندرجہ ذیل اصطلاحات کا استعمال نہیں کیا جانا چاہیئے کیونکہ وہ مبہم ہیں اور کسی کام کو مناسب طریقے سے حل نہیں کرتیں۔ آپ کو ہمیشہ واضح زبان کا استعمال کرتے رہنا چاہیئے اور مناسب الفاظ کا انتخاب کرنا چاہیئے جو آپ کے خیالات کو واضح طور پر ظاہر کریں۔ 

برا اچھی برا اچھی
آج کل حال ہی میں بحث کا بنیادی نکتہ اہم/کلیدی مسئلہ یہ ہے…
نہیں کر سکتے نہیں کر سکتے ہیں سامان/چیز صحیح لفظ استعمال کریں!
متنازعہ معاملہ اہم مسئلہ مثلاً مثال کے طور پر، ۔۔۔
نفع اور نقصان فوائد اور خرابیاں ہر سکے کے دو پہلو/رخ ہوتے ہیں نقصانات اور فوائد دونوں ہیں…
پہلے اس کی بنیادی وجہ کیوں ایک دو دھاری تلوار حل بھی مسائل کی وجہ بن سکتا ہے…
دوئمتعلیم کی کمی اس کی ایک اور وجہ ہے… مختصراً خلاصۂ کلام

مرحلہ 7: متعدد پیچیدہ جملوں کے ڈھانچوں کا استعمال کریں

بینڈ 8 پر توقع کی جاتی ہے کہ آپ اپنے نظریات اور آرا کو پیش کرنے کیلئے ڈھانچوں کی ایک وسیع رینج کا درستی کے ساتھ استعمال کرسکتے ہیں۔ ممتحن کو دکھائیں کہ آپ ڈھانچوں کی ایک وسیع رینج کا استعمال کرسکتے ہیں اور یقینی بنائیں کہ آپ کے جملے غلطی سے پاک ہوں۔ 

پیچیدہ اور آسان جملوں کے امتزاج کا استعمال کرنا اہم ہوتا ہے۔ لیکن یاد رکھیں، آپ کے پیچیدہ جملے طویل اور پیچیدہ نہیں ہونے چاہیئیں۔  

آپ کے رموز و اوقاف درست ہونے ضروری ہیں، جس میں بڑے حروف، وقفہ (کوما) اور وقف لازم (فل سٹاپ) کا صحیح طریقے سے استعمال شامل ہے۔  

ہوسکنے والی سب سے عام غلطیاں ذیل میں دی گئی ہیں۔

گرائمر عام غلطیاں
ریلیٹیو کلاز ضمیر کا غلط استعمال کرنا - who/that/which
کنڈیشنل کلاز فقرے کی قسم کیلئے غلط زمانہ منتخب کرنا - صفر، 1،2،3 ٹائپ کریں
ماضی قریب/ماضی غلط زمانہ کا انتخاب کرنا - had/have had
غیر فعال غلط ماضی صفت فعلی کا انتخاب کرنا
جیرنڈ ing- کے ساتھ غلطیاں کرنا
قابل شمار اسم واحد اور جمع اسم کے ساتھ غلطیاں کرنا
مضامین a/the کا غلط استعمال کرنا، یا اسے بالکل بھی استعمال نہ کرنا
فاعل/فعل کی مطابقت girls - واحد یا جمع ’ہیں‘
حرف ربط غلط تابع حرف ربط کا انتخاب کرنا، مقام کا غلط حرف ربط وغیرہ۔
رموز اوقاف غلط استعمال کیا گیا، یا بالکل استعمال نہیں ہوا۔

مرحلہ 8: جانچ فہرست

یہ یقینی بنانے کیلئے درج ذیل چیک لسٹ کا استعمال کریں کہ آپ کی تحریر میں بینڈ 8 کی ساری مثبت خصوصیات موجود ہیں

مشق کا جواب
  •  کیا آپ نے سوال کے سارے حصوں کا مناسب طور پر جواب دیا؟
  • کیا آپ کے تمام نظریات اور معاونت سوال سے براہ راست مطابقت رکھتے ہیں؟
  • کیا آپ نے موضوع کو زیادہ عام بنانے سے گریز کیا؟
  • کیا ممتحن کو بالکل وہی معلوم ہے جو آپ کے خیال میں ہے، اور کیا آپ پورے مضمون کیلئے یہ مقام واضح طور پر پیش کرتے ہیں؟
  • کیا آپ نے واضح مثالوں کے ساتھ اپنے نظریات کی حمایت کی ہے [مبہم تحقیق اور سروے کے نتائج نہیں]؟
  • کیا آپ نے 250 سے زیادہ الفاظ لکھے ہیں؟
 
ہم آہنگی اور پیوستگی
  • کیا ممتحن آپ کے مضمون کے آغاز سے آخر تک آپ کے خیالات کو آسانی سے سمجھ سکتے ہیں؟
  • کیا یہ واضح طور پر پیشرفت کرتا ہے [تعارف، معاون مثال کے ساتھ اہم خیالات، اختتام]؟
  • کیا آپ نے کچھ رابطہ بنانے والے الفاظ اور فقرے استعمال کیے ہیں؟
  • کیا آپ تکرار کرنے سے اور ہر جملے کو ایک مربوط آلہ سے شروع کرنے سے گریز کرتے ہیں [پہلا... دوئم... تیسرا]؟
  • کیا آپ نے حوالہ جاتی [ان مسائل...] اور متبادل [مسائل/امور] کا صحیح استعمال کیا ہے؟
  • کیا آپ نے مناسب پیراگراف استعمال کیے ہیں؟
  • کیا آپ نے ہر خیال کی تخلیق کیلئے ایک پیراگراف استعمال کیا ہے؟ 
  • کیا ایک واضح تعارفی اور اختتامی پیراگراف موجود ہے؟ 
لغوی ذریعہ
  • کیا آپ نے ایسے ذخیرۂ الفاظ کا استعمال کیا جو موضوع سے متعلق ہو؟
  • کیا آپ نے ذخیرۂ الفاظ کے عین مطابق انتخاب کا استعمال کیا ہے؟
  • کیا آپ نے یاد کی ہوئی زبان، کلیچیز [دو دھاری تلوار] اور محاورات سے گریز کیا؟
  • کیا آپ نے ترتیب کا درست استعمال کیا [ماحولیاتی پریشانی | عالمی مسئلہ]؟
  • کیا آپ نے مناسب غیر عام الفاظ استعمال کیے ہیں [نقصان دہ | ثقافتی تنوع | اقدامات]؟
  • کیا آپ نے ہجے کی غلطیوں کو درست کیا؟
  • کیا آپ نے ٹائپ کی غلطیوں کی جانچ کی؟
  • کیا آپ نے اس لفظ کی صحیح شکل استعمال کی ہے جس کی آپ کو ضرورت تھی [متعلق فعل، اسم، صفت، اور فعل] ہیں؟
قواعد کا دائرہ کار اور درستگی
  • کیا آپ نے آسان اور پیچیدہ ڈھانچوں کا درست استعمال کیا؟
  • کیا آپ نے بہت سارے ڈھانچوں کا استعمال کیا ہے [مشروط، ماضی قریب، متعلقہ فقرے، شرطی فعل]؟
  • کیا آپ نے لمبے، پیچیدہ جملوں سے گریز کیا؟
  • کیا آپ کے جملے غلطی سے پاک ہیں؟
  • کیا آپ نے صحیح طور پر رموز اوقاف کا استعمال کیا؟
  • کیا آپ جملے شروع کرنے اور مناسب اسم کیلئے بڑے حروف کا استعمال کیا؟
  • کیا آپ نے اپنے پیچیدہ جملوں میں کوما استعمال کیا ہے، جہاں ضرورت تھی؟ [اگر حکومت ماحولیات سے متعلق حل کو عملی جامہ پہنانے میں فنڈز کی سرمایہ کاری کرتی ہے تو، فضا میں آلودگی کم ہوجائے گی]۔
  • کیا آپ نے جملے ختم کرنے کیلئے وَقفِ لازَم (./.) کا استعمال کیا ہے؟

اگر آپ ان 8 مراحل پر عمل کرتے ہیں، تو آپ تحریری مشق 2 میں بینڈ 8 کے راستے پر اچھی طرح گامزن ہوں گے۔ 

بینڈ 8 پانے میں آپ کی مدد کے 8 اقدامات: IELTS تحریری مشق 2

ہمارے IELTS ماہر سے ان 8 اقدامات کے بارے میں جانیں جو IELTS تحریری مشق 2 میں بینڈ 8 حاصل کرنے لیے ضروری ہیں۔

https://images.ctfassets.net/unrdeg6se4ke/drhxDA0N7pUiAKxV53EjS/4e20ff1c44286c68748ace72ecb38760/8_Steps_to_help_you_reach_a_Band_8_IELTS_Writing_Task_2_-_thumbnail__high_res_.jpg
2021-07-05T14:17:03.334Z
https://videos.ctfassets.net/unrdeg6se4ke/377ojdWIJiLLtJFVfWftbC/efb7020696b6f922d2815bc0a4fee53a/8_Steps_to_help_you_reach_a_Band_8__IELTS_Writing_Task.mp4